پاکستان نیوی اورپاکستان میری ٹائم سیکیورٹی کے بحری جہاز یواے ای کے دورے پر

31
Print Friendly, PDF & Email

پاکستان نیوی اورپاکستان میری ٹائم سیکیورٹی کے

جہازمددگار اورزوب متحدہ عرب امارات (دبئی) کے دورے پر

دبئی(نیوزڈیسک):: پاکستان نیوی کا فلوٹیلا جس میں پاکستان نیوی کے جہاز مددگار اور پاکستان میری ٹائم سیکیورٹی شپ زوب شامل ہیں دونوں جہاز 08جنوری 2024 کو پورٹ مینا راشد دبئی پہنچ گئے۔ یہ بحری جہاز 08 سے 11 جنوری2024 تک برادر خلیجی ملک متحدہ عرب امارات کا سفر کر رہے ہیں۔ بحری جہاز کا استقبال پاکستان کے قونصل جنرل حسین محمد اور یو اے ای نیوی کے اعلیٰ حکام نے کیا۔ پاکستان نیول شپ مددگار ایک کثیر مقصدی چھوٹا ٹینکر کم یوٹیلیٹی جہاز ہے جبکہ پاکستان میری ٹائم سکیورٹی شپ زوب کو سمندر میں قانون نافذ کرنے اور پولیسنگ کے لیے ڈیزائن کیا گیا ہے۔ پی این ایس مدگار اور پی ایم ایس ایس ژوب پاکستان میں مقامی طور پر ہی تیارکیئے گئے ہیں۔
 پاکستان اور متحدہ عرب امارات کے درمیان قریبی سفارتی اور خوشگوار تعلقات ہیں۔ پاک بحریہ اور متحدہ عرب امارات کی بحریہ کے درمیان بھی برسوں کے دوران خوشگوار تعلقات ہیں۔ اس سلسلے میں، دونوں بحری افواج کے بار بار دورے ایک باقاعدہ خصوصیت ہے جس میں پاکستان نیوی کی شرکت بھی شامل ہے۔
آئیدیکس/نیوڈیکس 2023 اور دو طرفہ پاکستان – متحدہ عرب امارات کی مشق نصر البحر ایک باقاعدہ خصوصیت ہے جو دونوں بحری افواج کے درمیان قریبی تعلقات کو فروغ دینے کی پاکستان نیوی کی خواہش کا مظہر ہے۔ پاکستان نیول فلوٹیلا کے دورے کا مقصد ان تعلقات کو مزید مضبوط بنانا ہے۔ پاکستان امن و استحکام اور عالمی مشترکات کے فروغ پر یقین رکھتا ہے اور سمندری میدان میں سلامتی، تحفظ اور استحکام کے لیے پرعزم ہے۔ پاک بحریہ سمندر میں دہشت گردی، بحری قزاقی اور دیگر غیر قانونی سرگرمیوں کا مقابلہ کرنے میں ثابت قدم ہے۔ دونوں ممالک ابھرتے ہوئے خطرات کا مقابلہ کرنے اور مضبوط دفاعی پوزیشن کو برقرار رکھنے کے لیے ایک مربوط نقطہ نظر کی اہمیت کو تسلیم کرتے ہیں۔ علاقائی امن اور استحکام کو یقینی بنانے کے لیے مشترکہ عزم فوجی تعلقات کو مستحکم کرتا ہے، باہمی اعتماد اور افہام و تفہیم کو فروغ دیتا ہے۔ یہ تعاون نہ صرف دوطرفہ تعلقات کو مضبوط بناتا ہے بلکہ مشرق وسطیٰ میں سیکورٹی کے وسیع تر منظرنامے میں بھی حصہ ڈالتا ہے، جو ایک سٹریٹجک شراکت داری کی عکاسی کرتا ہے جو مشترکہ سلامتی کے خدشات کو دور کرتا ہے اور علاقائی تعاون کو فروغ دیتا ہے۔
 پاکستان نیول فلوٹیلا کے افسران اور جوان بندرگاہ کے دورے کے دوران مختلف بات چیت میں مصروف رہیں گے تاکہ مضبوط دوطرفہ تعاون کے تسلسل کو یقینی بنایا جا سکے۔ پاکستان نیوی جہاز پر ایک سرکاری استقبالیہ کی میزبانی کریں گے۔ بندرگاہ پر قیام کے دوران جہاز پاکستانی اور مقامی کمیونٹی کے زائرین کے لیے بھی کھلے رہیں گے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.