عالمی یوم اساتذہ کے موقع پر پاکستان سوشل سینٹر شارجہ میں شاندارتقریب کااہتمام

47
Print Friendly, PDF & Email

عالمی یوم اساتذہ کے موقع پر پاکستان سوشل سینٹر شارجہ میں شاندارتقریب کااہتمام

تقریب صدرپاکستان سوشل سینٹرشارجہ چوہدری خالدحسین کی سرپرستی میں منعقدہوئی۔

تقریب کے مہمان خصوصی کمیونٹی ویلفئیراتاشی عمران شاہدتھے

کسی بھی مہذب اور تعلیم یافتہ معاشرے کی تعمیر میں اساتذہ کا کردار بنیادی اہمیت کا حامل ہے

شارجہ (نمائندہ خصوصی) عالمی یوم اساتذہ کے موقع پر صدرپاکستان سوشل سینٹرشارجہ چوہدری خالد حسین  کی سرپرستی میں پاکستان سوشل سینٹر شارجہ میں ایک خوبصورت اوررنگارنگ تقریب کااہتمام کیاگیا۔تقریب کے مہمان خصوصی پاکستان قونصلیٹ دبئی کے کمیونٹی ویلفیئراتاشی عمران شاہد تھے۔تقریب کاباقاعدہ آغازتلاوت کلام پاک سے ہواجس کی سعادت فراز احمد صدیقی نے حاصل کی جبکہ نظامت کے فرائض کلچرل ہیڈ پاکستان سوشل سینٹرشارجہ صائمہ نقوی نے ادا کئے۔چوہدری افتخار احمد نے مہمان خصوصی اور تمام اساتذہ کرام کو خوش آمدید کہا ۔ان کی خدمات کو ناقابل فراموش قرار دیا۔اور طلباء کو اپنے اساتذہ کا احترام کرنے کی تلقین کی
صائمہ نقوی نے خطبہ استقبالیہ پیش کیا اوراساتذہ کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ مہذب اور تعلیم یافتہ معاشرے کی تعمیر میں اساتذہ کا کردار بنیادی اہمیت کا حامل ہے۔صائمہ نقوی کا کہنا تھا کہ درس و تدریس شیوہ پیغمبری ہے، اس شعبے سے وابستہ ہونا باعث سعادت و اعزاز ہے، اللہ تعالی نے انسانوں کو جہالت کے اندھیروں سے نکالنے اور انسانیت کی فلاح و بہبود کے لیے انبیاء کرام کو مبعوث فرمایا جنہوں نے درس و تدریس کے ذریعے انسانیت کو جہالت کی پستیوں سے نکال کر آسمان کی بلندیوں تک پہنچایا۔صائمہ نقوی نے کہاکہ اساتذہ قوم کے معمار ہیں جو نوجوان نسل کی ذہنی نشونما میں سیڑھی کا کردار ادا کرتے ہیں، ہمارا مذہب علم کے حصول کو نہایت اہمیت دیتا ہے اور اساتذہ کے ادب و احترام کی تلقین کرتا ہے
اپنے اساتذہ اور مہمانوں کو خوش آمدید کہنے کے لئے پاکستان ایجوکیشن اکیڈمی دبئی اور پامیر پرائیویٹ اسکول کے بچوں نے ایک خوبصورت ٹیبلو پیش کیا۔اسلامیہ ہائر اسکینڈری اسکول شارجہ کی طالبہ نے اپنے اساتذہ کے لئے ایک خوبصورت نظم پیش کی۔ پامیر پرائیویٹ اسکول کے بچوں نے خوبصورت تقاریرسےاپنے جذبات کا اظہار کیا۔پاکستان ایجوکیشن اکیڈمی دبئی کے طلبہ نےانتہائی خوبصورت انداز میں کلچرل پرفارمنس پیش کر کے سب کے دل موہ لئے۔ خرد ,قنیطہ,ایمان,اور دیگر بچوں نے خوبصورت تقاریر اور نظمیں پیش کر کے اپنے اساتذہ سے اپنی محبت کا اظہار کیا۔ طلبہ نے ایک بہترین ڈرامہ پیش کر کے یہ پیغام دیا کہ ہم کامیابی کی جتنی بھی سیڑھیاں طے کر لیں لیکن ان کا سہرا ہمارے اساتذہ کے سر ہوتا ہے۔اساتذہ اپنے طلبہ کی شخصیت میں نکھار پیدا کرتے ہیں اور ہمیشہ انہیں بلند مقام پر دیکھنا چاہتے ہیں۔اور طلبہ بھی اپنے اساتذہ کو کبھی تنہا نہیں چھوڑتے۔اس ڈرامے کے اہم کرداروں میں عماد الحسن نےاستاد کا مرکزی کردار نبھایا ان کی ایکٹنگ اور آواز کے جادو نے تمام حاضرین کو اپنے سحرمیں جکڑ لیا۔طلبہ و طالبات کے کردار سید ارسل عباس نقوی,سیدہ عیشال زینب,ایمان,حنینہ نے احسن طریقے سے نبھائے ۔اب اس مرحلے کی باری تھی جس کا سب کو
بے چینی سے انتظار تھا۔اس پروگرام کی سب سے خاص بات یہ تھی کہ اس میں متحدہ عرب امارات کے تمام پاکستانی اسکولز سے ان کے پرنسپل کی طرف سے دو سینٹر اساتذہ کے نام لئے گئے۔ کل گیارہ اسکولز نے اپنے ادارے کے دو بہترین اساتذہ کے نام منتخب کر کے بھیجے ۔۔
پاکستان ایجوکیشن اکیڈمی دبئی سے مس مجیدہ الطیب عثمان اور مسٹر نیر جمال،پامیر پرائیویٹ اسکول سے مس سندس ماریہ اور مس میمونہ جہانگیر پاکستان اسلامیہ ہائر اسکینڈری اسکول شارجہ سے مس عامرہ راشد اور مس صائمہ شفیق،پاکستان اسلامیہ سکول فجیرہ سے،مسٹر جاوید محمود اور مسٹر ولائت شاہ،,اسلامیہ اسکول العین سے مس رخشندہ جبین اور مسٹر محمد،پاکستان اسلامیہ ہائر اسکینڈری اسکول عجمان سے مس سلمی وحید اورمس سیدہ فاطمہ،انگلش لینگویج پرائیویٹ اسکول دبئی سے مس راشدہ شاہ اور مس عفرہ علی احمد،شیخ راشد المکتوم پاکستان اسکول دبئی سےمسٹر آصف جدون اور مسٹر رانا سہمی،اسلامیہ سکول راشد الخیمہ سے مس بشری حسن اور مسٹر نعیم اقبال،خلیفہ اسکول ابوظہبی سے مس فرح جاوید اور مس لیلی ناہید روپا ان تمام اساتذہ کو اعزاز دینے کے لیے
صدر پاکستان سوشل سینٹر شارجہ چوہدری خالد حسین اور مہمان خصوصی عمران شاہد کو اسٹیج پر بلایا گیا ۔اور پھر ان کی خدمات کو سراہتے ہوئے انہیں اعزازی شیلڈ سے نوازا گیا۔مہمان خصوصی عمران شاہد قونصلر سوشل ویلفیئر نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ انہیں بہت خوشی اور فخر محسوس ہو رہا ہے کہ ہم آج بھی اپنے اساتذہ کی قدر و قیمت اور مقام کو بھولے نہیں ہیں۔انہوں نےکہاکہ پاکستان سوشل سینٹر شارجہ کا یہ قدم قابل ستائش ہے کہ انہوں نے قوم کے معماروں کو اس خوبصورت انداز میں سلام پیش کیا ہے۔چوہدری خالد حسین نے بھی اساتذہ کے مقام اور مرتبے پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ ہمیں زندگی کے کسی موڑ پر بھی اپنے اساتذہ کو فراموش نہیں کرنا چاہیے۔ انہوں نے اپنے اساتذہ کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ میں آج جس مقام پر ہوں اپنے اساتذہ کی وجہ سے ہوں ۔آج کی نسل کو اپنے اساتذہ کی قدر کرنی چاہیے ۔اور انہیں وہ مقام ملنا چاہیے جس کے وہ اصل حقدار ہیں۔
پروگرام کے آخر میں صائمہ نقوی نے ان الفاظ کے ساتھ سب کا شکریہ ادا کیا کہ آج کا دن ان عظیم ہستیوں کو خراج تحسین پیش کرنے کا دن ہے جو جاں فشانی، خلوص اور لگن سے ایک تعلیم یافتہ معاشرے کی تعمیر کرتے ہیں، ملک میں تعلیم کے فروغ کیلئے اساتذہ کے حقوق کا تحفظ اور ان کو جائز مقام دینا ضروری ہے

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.