چئیرمین ڈینیوب گروپ رضوان ساجن کی عزت مآب شیخ محمدبن راشد المکتوم سے ملاقات

25
Print Friendly, PDF & Email

چئیرمین وبانی ڈینیوب گروپ رضوان ساجن اورمینجنگ ڈائریکٹرعادل ساجن کی            نائب صدرووزیراعظم یواے ای وحاکم دبئی عزت مآب شیخ محمدبن راشدالکتوم              اورکراؤن پرنس عزت مآب شیخ حمدان بن محمد بن راشد الکتوم سےملاقات                یواے ای کے عظیم حکمران بلند وژن رکھتے ہیں (رضوان ساجن)                        یواے ای کی ترقی کاکریڈٹ یقیناً یہاں کے حکمرانوں کوجاتاہے (عادل ساجن)

 دبئی(نیوزڈیسک)::گزشتہ دنوں نائب صدرووزیراعظم یواے ای وحاکم دبئی عزت مآب شیخ محمدبن راشد المکتوم کی جانب سے دبئی کی بزنس کمیونٹی کے اعزازمیں اپنے پیلس میں رمضان افطارکااہتمام کیاگیا جس میں مختلف شعبہ ہائے زندگی سے وابستہ ممتاز شخصیات نے شرکت کی۔اس میں بانی وچئیرمین ڈینیوب گروپ رضوان ساجن اور مینجنگ ڈائریکٹرڈینیوب گروپ عادل ساجن نے عزت مآب شیخ محمدبن راشد ور ولی عہد دبئی عزت مآب شیخ حمدان بن محمد المکتوم سے ملاقات کی۔                                                 اس موقع پربانی وچئیرمین ڈینیوب گروپ رضوان ساجن نے کہا کہ رمضان کے اس بابرکت مہینے میں ہمارے عظیم حکمران عزت مآب شیخ محمد بن راشد المکتوم سے ان کی جانب سے  افطار کے موقع پر ملاقات اور ان کو تہہ دل سے مبارکباد پیش کرنا واقعی ہمارے لیئے بہت بڑے اعزاز اور خوشی کی بات ہے۔ ان کے ساتھ  بصیرت انگیز گفتگو میں، ہم نے دبئی کے لیے ان کے وژن کے بارے میں بات کی جس نے اسے عالمی سطح پر سرمایہ کاروں کے لیے ایک سنہری تجارتی مرکز بنا دیا ہے۔ ہم نے گولڈن ویزا کے تعارف پر بھی تبادلہ خیال کیا جس نے یہاں کاروبار کے ساتھ ساتھ رئیل اسٹیٹ طبقہ کو فروغ دینے میں کلیدی کردار ادا کیا ہے۔ شیخ حمدان بن محمد بن راشد آل مکتوم سے ملاقات اور اس عظیم طرز حکمرانی کے بارے میں بات کرنا بھی خوشی کا باعث تھا جس نے دبئی کو دنیا بھر میں سب سے زیادہ پسند کیے جانے والے مقامات میں سے ایک بنا دیا ہے۔ اللہ تعالی ہمارے ان بلند وژن رکھنے والے حکمرانوں کو ہمیشہ سلامت اور خوش رکھے جنہوں نے اس ملک کو امن اور خوشحالی کی راہ پر گامزن کیا ۔
 اس موقع پر مینجنگ ڈائریکٹر ڈینیوب گروپ مسٹرعادل ساجن نے اپنے خیالات کااظہارکرتے ہوئے کہا کہ عزت مآب شیخ محمد بن راشد المکتوم اور شیخ حمدان بن محمد بن راشد آل مکتوم سے مل کر اور اس خطے کے کاروباری رہنماؤں سے ملاقات کے دوران ان کی شائستگی اور حقیقی انداز کو دیکھ کر بہت خوشی ہوئی۔
یہاں پیدا ہونے اور پرورش پانے کے بعد، میں نے خودمشاہدہ کیا کہ کس طرح یہ شہر اتنے کم وقت میں باقیوں سے بڑھ گیا ہے، اور اس کا پورا کریڈٹ ہمارے قائدین اور ان کے مضبوط وژن اوراس پر تیزی سے عمل درآمد کو جاتا ہے تاکہ دبئی کو دنیا کے سب سے بڑے شہروں میں سے ایک بنایا جا سکے۔ میں اپنی زندگی یہاں گزارنے پراپنے آپ کو بہت خوش قسمت محسوس کرتا ہوں، اور یقینی طور پرمیں اپنی باقی زندگی اس جادوئی شہر میں گزارنے کا ارادہ رکھتا ہوں۔انشااللہ۔
جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.